hedayatgar.ir

پسندیدہ
سفیان بن عوف کا ظلم وستم
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات(41)

سفیان بن عوف کا ظلم وستم

سفیان بن عوف غامدی کو معاویہ کی طرف سے حکم ملا کہ ایک لشکر کے ساتھ فرات کی طرف جائے تاکہ '' ہیت '' نامی شہر کہ جو'' انبار'' شہر کے پاس ہے جائے اور پھر وہاں سے انبارجائے اوراگرراستے میں کوئی مقابلہ وغیرہ کرے تو اس پر حملہ کرکے انہیں برباد کردینا اور اگرراستے میں کسی نے مزاحمت نہ کی تو شہر انبار تک جانا۔
حجر بن عدی کو سردار بنا کر سرزمین سماوہ بھیجنا
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات(40)

حجر بن عدی کو سردار بنا کر سرزمین سماوہ بھیجنا

حضرت علی علیہ السلام نے حجر بن عدی کو چار ہزار فوج کا سردار بنایا اور اس کے لئےعلم باندھا، حجربن عدی روانہ ہوئے اور سرزمین '' سماوہ'' پہنچے اورمستقل ضحاک کی تلاش میں تھے یہاں تک کہ'' تدمر''کے علاقہ میں اس سے ملاقات ہوئی دونوں گروہوں کے درمیان جنگ شروع ہوگئی۔
عبداللہ کے قاتلوں کومتنبہ کرنے کا ارادہ
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات(39)

عبداللہ کے قاتلوں کومتنبہ کرنے کا ارادہ

عبداللہ کے قتل سے جو وحشت اوررعب پیدا ہوا اس نے امام علیہ السلام کو آمادہ کیا کہ جہالت اور بدبختی کو جڑ سے ختم کردیں، اسی وجہ سے آپ نے ارادہ کیا کہ "حروراء" یا نہروان جائیں۔
فساد کو جڑ سے ختم کرنا
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات(38)

فساد کو جڑ سے ختم کرنا

خوارج کے ساتھ امام علیہ السلام کا معاملہ بہت ہی نرم اور آسان تھا اور آپ جب بھی ان کو خطاب کرتے تھے توصرف محبت، نصیحت اورہدایت وراہنمائی کرتے تھے اس کے علاوہ کوئی دوسری چیز آپ سے نہیں سنی گئی ، حضرت نے مثل اس باپ کے جو چاہتا ہے کہ اپنے عاق اور سرکش بیٹے کو صحیح راستے پر لائے ان لوگوں سے معاملہ کیا اور ان کے حقوق کوبیت المال سے ادا کیا۔
جنگ نہروان سے امام علی علیہ السلام کی شہادت تک
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات(37)

جنگ نہروان سے امام علی علیہ السلام کی شہادت تک

حضرت علی علیہ السلام مسجد میں داخل ہوئے اورمحراب عبادت میں نماز کے لئے کھڑے ہوگئے تکبیرۃ الاحرام کہا اورحمد و سورہ پڑھنے کے بعد سجدے میں گئے ایسے عالم میں ابن منجم مرادی نے فریاد بلند کی " للہ الحکم لا لک یا علی" اور زہر سے بجھی ہوئی تلوارآپ کے سر اقدس پر ماری۔
قیدیوں کی رہائی
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات(36)

قیدیوں کی رہائی

جب صلح نامہ لکھا گیا اوراس پر دستخط وغیرہ ہوگئی اور دونوں طرف بھیج دیا گیا تو اس وقت امیرالمومنین نے دشمن کی فوج کے تمام قیدیوں کورہا کردیا،ان قیدیوں کی رہائی سے پہلے ہی عمروعاص اصرار کررہا تھا کہ معاویہ امام علیہ السلام کی فوج کے قیدیوں کو پھانسی دیدے۔
صلح نامہ کی عبارت
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات (35)

صلح نامہ کی عبارت

صلح نامہ سلسلے میں دونوں طرف کا اختلاف امام علیہ السلام کے سکوت کرنے اور پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے طریقے پرعمل کرنے سے ختم ہوا اورعلی علیہ السلام نے اجازت دی کہ ان کا نام بغیر لقب امیر المومنین کے لکھا جائے اور صلح نامہ لکھا جانے لگا۔
حکمین کا انتخاب
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات (34)

حکمین کا انتخاب

اس میں کوئی شک نہیں کہ قرآن گفتگو نہیں کرتا بلکہ ضروری ہے کہ قرآن پرعبور رکھنے والے اسے گفتگو کرائیں اوراس میں غورو فکر کریں اور خداوندعالم کے حکم کو تلاش کریں تاکہ کینہ و دشمنی سے دوری اختیارکریں اوراس ہدف تک پہنچنے کے لئے یہ طے پایا کہ شامیوں میں سے اورعراقیوں میں سے کچھ لوگ معین ہوں۔
مالک اشتر کو قتل معاویہ سے روکنا
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات (33)

مالک اشتر کو قتل معاویہ سے روکنا

ایک فوج کے لئے جنگ کے دوران سب سے بڑی مصیبت یہ ہے کہ اختلاف کی وجہ سے فوج دو حصوں میں تقسیم ہوجائے اور اس سے بدترسادہ لوح گروہ کا فتنہ و فساد کرنا اوراپنےعاقل و دانہ سردار کے متعلق سیاسی مسائل سے دورہونا ہے۔
حکمیت کا ماجرا
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام ک سوانح حیات (32)

حکمیت کا ماجرا

سرزمین صفین میں حکمیت کا ماجرا تاریخ اسلام کا بے نظیرواقعہ شمارہوتا ہے امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام جو کامیابی کے دو قدم فاصلے تک پہنچ چکے تھے اگر آپ کے بیوقوف و نادان ساتھی آپ کی حمایت کرنے سے باز نہ آتے یا کم سے کم آپ کے لئے مزاحمت ایجاد نہ کرتے تو فتنہ کو روکا جاسکتا تھا۔
مخالفین کے سامنے خلیفہ کا تعہد
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات(31)

مخالفین کے سامنے خلیفہ کا تعہد

گھر کا محاصرہ کرنے کی وجہ سے خلیفہ نے اپنے کاموں کواہمیت دی اور محاصرہ ختم کرنے کے بارے میں سوچنے لگا لیکن وہ مخالفوں کی حقیقی شورش سے باخبر نہ تھا اورمعاشرے کے اچھے لوگوں کو برے لوگوں کے درمیان سے تشخیص نہیں دے پاتا تھا اس نے گمان کیا کہ شاید مغیرہ بن شعبہ یا عمروعاص کے وسیلے سے یہ ناگہانی بلا ٹل جائے گی۔
مقدمہ کا واقعہ اورعثمان کا قتل
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات (30)

مقدمہ کا واقعہ اورعثمان کا قتل

جو پانچ وجہیں ہم نے بیان کی ہیں اس کا سبب یہ ہوا کہ تمام اسلامی مملکتوں سے اعتراضات ہونا شروع ہوگئے اورخلیفہ اور اس کے تمام نمائندوں پر الزامات لگنے لگے اوران تمام پر یہ الزام لگایا گيا کہ یہ سب کے سب اسلامی راستے سے منحرف ہوگئے ہیں۔
عمار یاسر پر ظلم وستم
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات (29)

عمار یاسر پر ظلم وستم

یہ صرف عبداللہ بن مسعود ہی نہ تھے جو خلیفہ کی بے توجہی کا نشانہ بنے بلکہ عمار یاسر بھی اس کے ظلم و ستم کانشانہ بنے، ان پر ظلم وستم اور اہانت کی وجہ یہ تھی کہ خلیفہ نے بیت المال کے بعض زیورات کو اپنے اہل وعیال کے لئے مخصوص کردیا تھا اور جب لوگ یہ دیکھ کر بہت غصہ ہوئے اور اعتراض کیا تو وہ اپنے دفاع اور صفائی کے لئے منبرپرگیا اورکہا:
تیسری وجہ: اموی حکومت کی تشکیل
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات (28)

تیسری وجہ: اموی حکومت کی تشکیل

عثمان کے خلاف شورش و حملہ کی تیسری وجہ،اسلام کے حساس مرکزوں پرامویوں کی ظالمانہ حکومت تھی وہ بھی ایسی حکومت جو بچے اور بوڑھے کو نہیں جانتی تھی اور خشک وتر کو جلا دیتی تھی۔
حضرت علی علیہ السلام کی ظاہری خلافت اور حکومت عثمان کا خاتمہ
امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کی سوانح حیات (27)

حضرت علی علیہ السلام کی ظاہری خلافت اور حکومت عثمان کا خاتمہ

خلفاء ثلاثہ کی حکومت کے خاتمہ کے بعد حضرت علی علیہ السلام منصب خلافت و رہبری پرفائز ہوئے اوراس دوران آپ بہت سے حادثات اور نشیب و فراز سے دوچار ہوئے، ہر چیز سے پہلے اس نکتہ کی جانب توجہ کرنا بے حد ضروری ہے کہ آخرکیا وجہ ہے کہ خلفاء ثلاثہ کے بعد عوام حضرت علی علیہ السلام کی طرف کیوں متوجہ ہوئی اور آپ کی خلافت کو قبول کیا۔؟
اس ہفتہ کی حدیث
قال علی بن ابی طالب علیہما السلام

المالُ عارِيةٌ

حضرت علی علیہ السلام فرماتے ہیں: مال و ثروت انسان کے ہاتھ میں ایک امانت ہے۔
ناظرین کی تعداد
آج وزٹ کرنے والوں کی تعداد :
9
گذشتہ روز وزٹ کرنے والوں کی تعداد:
60
اس مہینے وزٹ کرنے والوں کی تعداد:
2,246
اس سال وزٹ کرنے والوں کی تعداد:
2,255
مجموعی طور پر وزٹ کرنے والوں کی تعداد:
308,761
آخری مطلب جو اپلوڈ کیا گيا:
6 ماه پیش